Loading...

وہ آدمی جس نے 5 روپے سے 25 ارب روپے کی کمپنی بناڈالی،سب کیلئے سبق آموز کہانی

0

بھارتی شہری ڈاکٹر رام بخشانی آج سے 60سال قبل متحدہ عرب امارات آیا تھا، اس وقت اس کی جیب میں صرف 5روپے تھے اور آج وہ 25ارب روپے کی کمپنی کا مالک ہے۔ گزشتہ دنوں ڈاکٹر رام کی خودنوشت کی تقریب رونمائی ہوئی۔ اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر رام نے آج سے 60سال قبل اور آج کے متحدہ عرب امارات

کے متعلق بہت سے باتیں بیان کیں کہ 6دہائیاں قبل یہاں زندگی کتنی مختلف تھی اور کیسے اتنی جلدی یہ ملک پوری دنیا کے کاروبار کا مرکز بن گیا۔ڈاکٹر رام کا کہنا تھا کہ ’’اگر

ہم ء میں امارات کے لوگوں کو بتاتے کہ یہ اتنی ترقی کرے گا تو وہ ہم پر ہنس دیتے۔ میں18نومبر 1959ء کو کشتی پر پانچ دن کا سفر کرکے بھارت سے متحدہ عرب امارات پہنچا تھا اور اس وقت میرے پاس صرف پانچ روپے تھے۔ یہاں مجھے جو پہلی تنخواہ ملی وہ 125روپے تھی لیکن یہ رقم اس دور کے لحاظ سے کچھ کم بھی نہ تھی۔پھر میں نے ایک کمپنی کی بنیاد رکھی جو آج آئی ٹی ایل گروپ کی شکل اختیار کر چکی ہے۔ میری تمام تر کامیابی کا دارومدار عرب امارات کے لوگوں کے اعتبار ، دوستی اور تعاون پر ہے جنہوں نے اس کمپنی کی بنیاد رکھنے اور اس کے کامیاب ہونے میں ہر قدم پر میری معاونت کی۔

‘‘ڈاکٹر رام بخشانی نے نوجوان کاروباری افراد کو نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ ’’نیا کاروبار شروع کرنے والوں کومنافع کے لالچ میں پڑنے کی بجائے جذبے سے کام کرنا چاہیے۔ نوجوانوں کو بھاری بھرکم تنخواہوں کی طرف نہیں دیکھنا چاہیے، جو لوگ ایسے لالچ میں پڑ جاتے ہیں وہ زندگی میں ناکام رہتے ہیں۔ نوجوانوں کو کچھ ایسا کام کرنا چاہیے جس سے وہ لطف اندوز ہوں۔ آئی ٹی ایل گروپ دبئی کی ان چند پرانی کمپنیوں میں سے ایک ہے جنہوں نے آج کے جدید دبئی کی تشکیل میں اہم کردار ادا کیا۔آج ڈاکٹررام بخشانی عرب دنیا میں چوٹی کے بھارتی لیڈروں میں شمار ہوتے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
Loading...
تبصرے
Loading...