Loading...

آسٹریلیا میں کئی سفارتی تنصیبات کو مشتبہ پیکٹ موصول

0

آسٹریلیا کے دوسرے بڑے شہر میلبرن میں کئی سفارتی تنصیبات کو مشتبہ مواد سے بھرے پیکٹ موصول ہونے کے بعد پولیس نے ان تنصیبات کو لوگوں سے خالی کرالیا ہے۔

آسٹریلین براڈ کاسٹنگ کارپوریشن (اے بی سی) کے مطابق میلبرن میں واقع پاکستان، یونان، فرانس اور ہانگ کانگ کی سفارتی تنصیبات اور قونصل خانوں کو مشتبہ پیکٹ موصول ہوئے ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق میلبرن میں واقع بھارت، جرمنی، اٹلی، اسپین اور جنوبی کوریا کے قونصل خانوں اور سفارتی تنصیبات کے باہر بھی پولیس کی بھاری نفری، ایمبولینس اور فائر بریگیڈ دیکھی گئی ہیں۔

میلبرن میں واقع امریکی اور سوئس مشنز کے حکام نے بھی مشتبہ پیکٹ ملنے کی تصدیق کی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ شہر میں “نقصان دہ مواد” سے متعلق کم از کم 10 واقعات رپورٹ ہوئے ہیں جن کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

آسٹریلیا کی فیڈرل پولیس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ واقعات رپورٹ ہونے کے فوراً بعد ایمرجنسی سروسز کے اہلکار سفارتی تنصیبات پہنچے۔ بیان کے مطابق مشتبہ پیکٹس کا جائزہ لیا جارہا ہے۔

میلبرن میں بھارت اور فرانس کے قونصل خانوں کے باہر ایمرجنسی سروسز کے اہلکار موجود ہیں جب کہ عملے کے افراد باہر کھڑے ہیں۔

واقعات کے بعد میلبرن اور آسٹریلیا کے دارالحکومت کینبرا میں واقع بیشتر غیر ملکی سفارتی تنصیبات کو عملے اور عام لوگوں سے خالی کرالیا گیا۔

تاہم جانچ پڑتال کے بعد بیشتر تنصیبات کو کلیئر کردیا گیا ہے اور عملے کو عمارتوں میں واپس جانے کی اجازت دیدی گئی ہے۔

حکام کا کہنا ہےکہ دونوں شہروں میں تاحال مشتبہ مواد سے کسی شخص کو کوئی نقصان پہنچنے کی اطلاع نہیں ہے۔

‘اے بی سی’ کے مطابق میلبرن میں واقع نیوزی لینڈ کے قونصل خانے میں کام کرنے والے ایک اہلکار نے اسے بتایا ہے کہ مشتبہ پیکٹ میں ریشے جیسے مواد موجود تھا۔

یاد رہے کہ دو روز قبل سڈنی میں واقع ارجنٹائن کے قونصل خانے کو بھی مشتبہ مواد موصول ہوا تھا جس کے بعد قونصل خانے کو خالی کرالیا گیا تھا۔

بعد ازاں پیکٹ کا معائنہ کرنے والے حکام نے بتایا تھا کہ پیکٹ میں موجود مواد نقصان دہ نہیں تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
Loading...
تبصرے
Loading...