Loading...

’’سوات آکر ایسا لگ رہا ہے جیسے میں سوئٹزرلینڈ میں ہوں‘‘ سوئٹزرلینڈ کے سفیر نے پاکستان کی خوبصورتی کی تعریفوں کے پل باندھ دئیے ،غیر ملکی سیاحوں کو کیا پیغام دیدیا؟

0

سوئس حکومت گذشتہ 50سالوں سے پاکستان میں کئی ترقیاتی منصوبوں پر کام کر رہے ہیں۔ سوات اور سوئٹزرلینڈ کی زمین کی تزئین ایک جیسی ہے۔ سوات میں ہوتے ہوئے مجھے ایسا لگ رہا ہے کہ میں سوئٹزرلینڈ میں ہوں۔سفیرسوئٹزرلینڈ بھی پاکستان کی خوبصورتی کے دیوانے نکلے ،’’ایکسپلورنگ خیبر پختونخوا‘‘ پروگرام کی ایک تقریب میں خطاب کرتے ہوئے سوئس سفیر تھامس کولےنے کہا ہماری حکومت چاہتی ہے کہ اس ملک کی خوشحالی اور سیاحت کے شعبے میں ترقی کو فروغ ملے.سوئٹزرلینڈ صرف شعبہ سیاحت کی وجہ سے جی ڈی پی کا 10 فیصد حاصل کرتا ہے۔خیبر پختونخوا میں

سیاحوں کو اپنی طرف کھینچنے کی صلاحیت موجود ہے۔ اس موقع پر سینئیر وزیر پختونخواہ عاطف خان کا کہنا تھا کہ’’ کے پی ٹورازم اتھارٹی‘‘ کا قیام صوبے میں سیاحت

کو فروغ دینے کے لیے عمل میں لایا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سیاحت کے ذریعے سے دنیا بھر میں پاکستان میں مثبت تصویر اجاگر کی جاتی ہے اور ہم نے چترال اور ہنزہ میں دو جگہیں دیکھی ہیں جہاں اسکینگ ریزارٹ بنائے جائیں گے تاکہ زیادہ سے زیادہ سیاح یہاں کا رخ کر سکیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ خیبر پختونخواہ کے لوگوں کو امن اور خوشحالی کی ضرورت ہے اور

سیاحت ان مقاصد کو حاصل کرنے کے لئے ایک ذریعہ ہے۔عاطف خان نے پاکستان کی ترقی میں دلچسپی لانے کے لئے سوئٹزرلینڈ کی حکومت کی تعریف کی.عاطف خان نے مزید کہا کہ محکمہ سیاحت کے زیر اہتمام سوات،چترال اور ہزارہ میں کئی نئے مقامات پر سکی ریزارٹ بنا ئے جارہے ہیں جس کا انتظام نجی شعبہ کرے گا صوبے میں سیاحت کے فروغ کیلئے کے پی ٹورازم اتھارٹی کا قیام بھی عمل میں لایا جارہا ہے جس کی منظوری کابینہ دے چکی ہے اسی طرح ہم وفاق کی سطح پر بھی سیاحت کے فروغ کے لئے ویزہ پالیسی میں رعایت دے رہے ہیں ہم نے مختصر عرصے میں سیاحت کے ذریعے دنیا بھر میں پاکستان کا امیج بہتر بنایا ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
Loading...
تبصرے
Loading...