Loading...

حضرت جبرئیل علیہ السّلام کی ـ حضور نبی اکرم صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم کو ـ اصلی حالت میں دیکھنے کی تمنّا ـ

0

حضرت جبرئیل علیہ السّلام کی ـ حضور نبی اکرم صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم کو ـ اصلی حالت میں دیکھنے کی تمنّا ـ قرآن میں یوں بیان ہوئی ہے ـ وَقَالُوْا لَوْلَآ اُنْزِلَ عَلَيْهِ مَلَكٌ۔ اور کہتے ہیں اس پر کوئی فرشتہ کیوں نہیں اُتارا گیا۔!!! ( سورۃ الانعام،آیت:۸ ) تفاسِیر میں لِکھا ہے کہ ـ فرشتے کو اصلی حالت میں ـ کوئی نہیں دیکھ سکتا ـ اگر کوئی دیکھے گا تو

ہلاک ہو جائے گا ـ ( تفسِیر تِبیانُ الفُرقان،صفحہ ۲۷۱ ) اِسی لیے حضرت مریم ,حضرت ابراہیم ,حضرت لوط علیہم السّلام کے پاس فرشتے پاس فرشتے اِنسانی شکل میں آتے تھے لیکن حضور نبی اکرم صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم نے ـ فرشتوں کے سردار کو ـ اصلی حالت میں دیکھا ـ اور جب جبرئیل

جب جبرئیل علیہ السّلام نے عرض کِیا ـ آپ صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم مجھے بھی ـ اپنی اصلی حالت دِکھائیں ـ تو سرکار صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا ـ

اے جبرئیل ( علیہ السّلام )! تُو مجھے نہیں دیکھ سکتا ـ!!! مولانا رُوم رحمتہ اللّہ علیہ نے اِس واقعہ کو ـ بڑی خوبصورتی سے بیان فرمایا ہے ـ احمد ار بکشاید آں پَرّ جلیل تا ابد مدہوش ماند جبرئیل ”حضور نبی اکرم صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم نے تو ـ جبرئیل علیہ السّلام کو چھ سو پروں ـ کے ساتھ دیکھ لیا ـ لیکن حضور نبی اکرم صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم اگر ـ اپنا ایک پردۂ بشریت ہٹا دیتے ـ تو جبرئیل علیہ السّلام تاقیامت ـ بے ہوش ہو جاتے ـ “!!! ہماری آنکھ وہ ہے ـ جو سورج کو دیکھے تو ـ چندھیا جائے اور ـ حضور نبی اکرم صلی اللّہ علیہ وآلہ وسلم کی آنکھ مُبارک نے ـ خدا کو بھی دیکھا ـ اور ساری خدائی کو بھی دیکھا__!!!

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
Loading...
تبصرے
Loading...