Loading...

امپائر کے فیصلے پر غصہ دھونی کو مہنگا پڑ گیا

0

میچ کے دوران امپائر کے فیصلے کو تنقید کا نشانہ بنانے پر سابق بھارتی کپتان مہندرا سنگھ دھونی پر میچ فیس کا پچاس فیصد جرمانہ عائد کردیا گیا ہے۔

جے پور میں انڈین پریمئیر لیگ کے میچ کے آخری لمحات میں لیگ امپائر بروس اوکسنفورڈ نے نو بال کا فیصلہ مسترد کیا تھا۔ جس پر دھونی گراونڈ میں آ گئے اور دونوں امپائرز سے وضاحت مانگ لی۔

دھونی کی زیر قیادت چنائی سپر کنگز راجستھان رائلز کا مقابلہ کر رہی تھی۔

آئی پی ایل انتظامیہ کا کہنا ہے کہ انڈین پریمئر لیگ کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر دھونی پر میچ فیس کا 50 فیصدجرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ دھونی نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا اعتراف کرتے ہوئے جرمانے کی سزا کو قبول کر لیا ہے۔

دھونی کو آئی اپی ایل کے ضابطہ اخلاق کی شق 2 اعشاریہ 20 کے تحت جرمانہ عائد کیا گیا ہے جو کم سے کم سزا ہے۔ دھونی پہلی بار اس خلاف وزری کے مرتکب ہوئے ہیں۔

واقعے کے وقت دھونی میدان سے باہر بیٹھے میچ دیکھ رہے تھے۔ میچ سنسنی خیز مرحلے میں داخل ہو چکا تھا اور انگلش آل راونڈر بین اسٹوک کا آخری اوور جاری تھا۔

چنائی سپر کنگ کو تین گیندوں پر 8رنز کی ضرورت تھی،بین اسٹوک نے سلو گیند کرانے کی کوشش کی لیکن وہ فل ٹاس ہوگئی جسے وکٹ پر موجود امپائر الہاس گاندھے نے نو بال قرار دے دیا۔

چنئی سپر کنگ کے بیٹسمین مشیل سینٹنر اور رویندرا جدیجا دوسرے رن کے لئے دوڑ رہے تھے جس کے بعد ہدف کم ہوکر 3گیندوں پر 5رنز رہ جاتا۔ لیکن لیگ امپائر اوکسنفورڈ نے نو بال کے اصل فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا جس پر چنائی سپر کنگ کے کھلاڑی طیش میں آگئے۔

کپتان دھونی بھی غصے کی حالت میں میدان میں آگئے اور تصاویر میں ہاتھ کے اشاروں سے نو بال کے بارے میں بات کرتے دیکھے گئے۔ امپائرز نے تھرڈ امپائر کو معاملہ بھیجے بغیر فیصلہ کیا کہ فل ٹاس گیند بیٹسمین کی کمر سے اوپر نہیں تھی۔

امپائرز کے فیصلے کے بعد چنئی سپر کنگ کو جیت کے لئے دو گیندوں پر چھ رنز کی ضرورت تھی، مچل سینٹنر نے آخری گیند پر چھکا لگا کر دھونی کی ٹیم کو میچ جتوا دیا۔

چنائی سپرکنگ نے میچ تو اپنے نام کرلیا لیکن کپتان مہندرا سنگھ دھونی کے غصے نے انہیں میچ فیس کی 50فیصد رقم سے محروم کردیا۔

دھونی کے اس عمل پر سابق کرکٹرز سجنے منجریکر اور مائیکل وان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ دھونی کو پچ پر آکر غصے کا ہرگز اظہار نہیں کرنا چاہئے تھا ۔

مائیکل وان نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ یہ کرکٹ کے لئے اچھی علامت نہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
Loading...
تبصرے
Loading...