جاوید میانداد نے بھارت کو کرکٹ کیلیے غیر محفوظ ملک قرار دیدیا

تمام ممالک بھارت کیساتھ کھیلوں کی سرگرمیاں معطل کردے، لیجنڈری کرکٹر

مزید خبریں

 کراچی: قومی ٹیم کے سابق کپتان جاوید میانداد نے آئی سی سی سے مطالبہ کیا ہے کہ بھارت میں کسی ٹیم کو نہ بھیجا جائے اور نہ ہی بھارت کو کسی ایونٹ میں مدعو کیا جائے کیوں کہ وہ محفوظ ملک نہیں رہا۔ 

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ایک ویڈیو میں جاوید میانداد کا کہنا تھا کہ اس وقت بھارت میں جیسے حالات ہیں اس کے پیش نظر تمام پروفیشنل ٹیموں کو بھارت نہیں جانا چاہیے، میں آئی سی سی سے بھی مطالبہ کرتا ہوں بھارت کو کسی بھی ایونٹ میں مدعو نہ کیا جائے اور تمام کرکٹ ٹیموں کو بھارت بھیجنے سے روکا جائے۔

پاکستان کے لیجنڈری کرکٹر کا کہنا تھا کہ کشمیر اور مسلمانوں کے لیے بھارت میں نفرت کی آگ پھیلائی ہوئی ہے، ایسے لوگوں کو پوری دنیا میں کہیں بھی نہیں بلانا چاہیے جو اپنے ملک میں لوگوں کو تحفظ فراہم نہیں کرسکتے۔

سابق ٹیسٹ کپتان نے کہا کہ پاکستان نہیں بلکہ بھارت اب محفوظ ملک نہیں رہا لہذا وہاں پر کرکٹ کھلانا مناسب نہیں، بھارت اب کسی بھی قسم کی سیاحت اور کھیلوں کے لیے محفوظ ملک نہیں ہے اور اس کے مقابلے میں پاکستان اب کھیلوں کی سرگرمیوں کے لیے ہر طرح سے محفوظ ملک ہے۔

جاوید میانداد کا کہنا تھا کہ پوری دنیا بھارت میں ہونے والے حالیہ واقعات پر بات کررہی ہے، یہاں تک کہ اقوام متحدہ میں بھی بھارت کی بات کی جارہی ہے اور میں تمام ممالک کو خبردار کرتا ہوں وہ بھارت کے ساتھ ہر قسم کے کھلیوں کی سرگرمیاں معطل کردے کیوں کہ وہ اب محفوظ ملک نہیں رہا اور تمام ممالک کو بھارت میں ہونے والے واقعات پر ایکشن لینا چاہیے، جہاں انسانوں کو جانوروں کی طرح مارا جارہا ہے۔

سابق کپتان نے دنیا بھر کے کھلاڑیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ آئی پی ایل کا بائیکاٹ کریں یا کم از کم بھارت آنے سے پہلے سیکیورٹی گارنٹی لیں جیسے سب پاکستان کے ساتھ کرتے آرہے ہیں لیکن اب پاکستان بھارت سے زیادہ محفوظ ملک ہے جس کا ثبوت سری لنکا کا حالیہ دورہ پاکستان ہے جس میں وہ مکمل طور پر مطمئن ہوکر واپس گئے ہیں۔

Loading...

Comments are closed.