شاہ محمود قریشی کی واشنگٹن میں مائیک پومپیو سے ملاقات

مزید خبریں

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے, جو امریکہ کے دورے پر ہیں، جمعے کے روز واشنگٹن میں اپنے امریکی ہم منصب مائیک پومپیو سے ملاقات کی، جس دوران مشرق وسطیٰ، خطے کی صورت حال اور افغان امن عمل کے موضوعات زیر گفتگو آئے۔

پاکستان کے دفتر خارجہ کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق شاہ محمود قریشی اور مائیک پومپیو کے درمیان امریکی محکمہ خارجہ میں ہونے والی اس ملاقات میں دو طرفہ تعلقات اور علاقائی دلچسپی کے اہم امور پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر خطے میں کشیدگی گھٹانے کی کوشش کے سلسلے میں تین ملکی دورے کے آخری مرحلے میں اب واشنگٹن میں ہیں۔

اس سے قبل وہ تہران اور سعودی عرب کا دورہ کر چکے ہیں، جہاں انہوں نے ایرانی اور سعودی قیادت سے اپنی ملاقاتوں میں مشرق وسطیٰ کی کشیدہ صورت حال پر گفتگو کی تھی۔

پاکستان کے دفتر خارجہ کے بیان کے مطابق شاہ محمود قریشی نے سعودی عرب اور ایران کی قیادت سے ملاقاتوں کی تفصیلات کے بارے میں امریکی وزیر خارجہ پومپیو کو آگاہ کیا۔

جنوری کے شروع میں امریکہ اور ایران کی ایک دوسرے کے خلاف فضائی کارروائیوں کے بعد مشرق وسطیٰ کی صورت حال انتہائی کشیدہ ہو چکی ہے، جس پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان نے فریقین پر تحمل سے کام لینے پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ خطہ اب کسی نئے تنازع کا متحمل نہیں ہو سکتا۔

امریکی ہم منصب سے ملاقات میں پاکستان کے وزیر خارجہ قریشی نے کہا کہ پاکستان، خطے میں امن و استحکام کا خواہش مند اور خطے میں پائی جانے والی کشیدگی کے خاتمے کے سلسلے میں اپنا کردار ادا کرنے کے لئے پر عزم ہے۔

شاہ محمود قریشی نے نئی دہلی کی جانب سے گزشتہ سال پانچ اگست کو جموں و کشمیر کی خصوصی ختم کرنے کے بعد وہاں جاری مبینہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے بھی مائیک پومپیو کو آگاہ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پانچ اگست سے بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں ذرائع مواصلات پر سخت پابندیاں عائد ہیں جس کا مقصد وہاں کے معروضی حالات اور حقیقی صورت حال کو دنیا کی نظروں سے پوشیدہ رکھنا ہے۔

پاکستانی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے سے ہی جنوبی ایشیا ایک پرامن خطہ بن سکتا ہے۔

انہوں نے اس توقع کا بھی اظہار کیا کہ افغان تنازع کا کوئی سیاسی حل جلد نکل آئے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان خلوص نیت کے ساتھ افغان امن عمل میں مشترکہ ذمہ داری کے تحت اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔

پاکستانی دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ امریکی وزیر خارجہ نے افغانستان کے سیاسی تصفیے اور افغان امن عمل کے سلسلے میں پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔

امریکہ کے محکمہ خارجہ کی ترجمان مورگن اورٹیگس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے واشنگٹن ڈی سی میں پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات کی، جس میں دونوں رہنماؤں کے درمیان خطے میں ایران کی مبینہ ضرررساں سرگرمیوں، افغان امن عمل میں پاک امریکہ تعاون کی اہمیت اور دو طرفہ اقتصادی تعلقات کے فروغ سمیت مختلف امور زیر بحث آئے۔

Loading...

Comments are closed.